احمق آباد ، اور دشمن کی میلی آنکھ

احمق آباد کے احمقوں کی ایک ازلی پرابلم تھی اور یہ مسلہ تھا احمق آباد کے احمقوں کے دشمن کی میلی آنکھ – یہ میلی آنکھ ہر تھوڑی دیر، ہر گھڑی، ہر وقت اٹھ جاتی اور احمق آباد کے احمقوں کو انتہائی گندے طریقے سے دیکھتی – اس آنکھ کے اٹھنے سے احمق آباد کے احمقوں کی شدید بے پردگی ہوتی- یہ احمق ہر بے پردگی کے بعد زور و شور سے چیختے چلاتے ، اپنے گھروں کی توڑ پھوڑ کرتے اور دشمن کی میلی آنکھ نکالنے کی دھمکیاں دیتے ! مگر با شرع پردہ رکھنے والے احمقوں کی ہر دھمکی اور چیخم دھاڑ سے بےپروا دشمن “کڑی مڑی” میلی آنکھ سے گندی نظریں ڈالتا رہتا –

پھر ہوا کچھ یوں کہ احمق آباد کی پارلیمنٹ ( اس لفظ کے اصلی لغوی معنی دیکھ لیں ) نے آخر کر بےپردگی سے بچنے کے لئیے ایٹم بم بنا لیا – اور اس دن کے بعد سے دشمن نے میلی آنکھ اٹھانا چھوڑ دی ، اب وہ ڈائریکٹ میزائل اٹھا کر مارتا ہے – اس ایٹم بم کے بعد دشمن کی میلی آنکھ اٹھا کر دیکھنے والی بھینس پانی میں چلی گئی اور یوں احمق آباد کے احمقوں کی ازلی مشکل حل ہوئی –

ویسے یہ احمقانہ تحریر بھی کسی احمق آباد کے احمق کے احمقانہ خیالات پر مبنی تحریر ہے اور اس پر اپنی احمقانہ یا فلسفیانہ راۓ دینے سے اجتناب فرمائیں-

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s